صوبے میں جرائم میں کمی ہوئی ہے: وزیر اعلیٰ سندھ

وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ صوبے میں جرائم میں کمی ہوئی ہے انہوں نے کہا کہ میڈیا پر جرائم کی نشاندہی تو کی جاتی ہے مگرجب پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کارروائیوںکے باعث جرائم ختم ہوجاتے ہیں تو وہ منظر عام پر نہیں آتے جب کہ اس وقت بھی سندھ اور پنجاب کے کچے کے علاقوں میں ڈاکوئوں کے خلاف آپریشن جاری ہے وہ آج پی پی پی کے رہنما ڈاکٹر عرفان گل مگسی کی رہائش گاہ پر ان کی ساس کے انتقال پر تعزیت کرنے کے بعد میڈیا کے نمایندوں سے باتیں کر رہے تھے ۔ مردم شماری سے متعلق سوال پر وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ انہیںسب سے زیادہ مردم شماری پر اعتراضات ہیں اور کہا کہ انہوں نے ان اعتراضات سے متعلق متعلقہ حکام کو 11 خطوط تحریر کیے ہیں انہوں نے کہا کہ دوسرے صوبوں میں فی خاندان 6.2 یا 6.3 افراد شمار کیے گئے ہیں جبکہ سندھ میں فی خاندان 5.4 افراد شمار کیے گئے ہیں جو کہ سمجھ سے بالا تر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت سندھ کی آبادی ساڑھے 7 کروڑ سے کم نہیں ہے ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سیلاب سے 1.5 بلین ڈالر کا نقصان ہوا جبکہ چیرمین بلاول بھٹو زرداری کی کاوشوں سے گھروں کی تعمیر کیلئے آدھی رقم جمع کر لی گئی ہے اور ان کی تعمیر کا کام مشہور سماجی تنظیموں کو دیا گیا ہے انہوں نے کہا کہ ہر متاثرہ گھر کی تعمیر کے لیے 3 لاکھ روپے دیے جائیں گے اور اس ضمن میں پہلے مرحلے میں 75 ہزار روپے تصدیق کے بعد دیئے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ سال غیر معمولی بارشوں کے پانی کی کامیابی سے ناصرف نکاسی کی بلکہ اچھی گندم کی فصل کاشت بھی کی ۔ ایک سوال پر وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ پنجاب اور کے پی کے اسمبلیوں کی تحلیل پر پیٹیشن داخل کی گئی ہے جو کہ پی ٹی آئی کا یو ٹرن پر ایک اور یو ٹرن ہے

No Comments

Post A Comment

Verified by MonsterInsights